شہید زکریا بدوان کی والدہ کا بیٹے کی شہادت کے بعد انٹرویو

شہید زکریا بدوان کی والدہ نے کہا ہے کہ شہید زکریا بہت پیار کرنے والے انسان تھے اور وہ اپنے خاندان کے سب سے نیک لوگوں میں سے تھے ۔ اسرائیلی قبضے نے انہیں شہید کر کے ان کے ساتھ زیادتی کی اور ان کے خاندان اور بچوں کو تنہا چھوڑ دیا ۔

شہید کی والدہ نے میڈیا کے بیانات کے دوران اشارہ کیا کہ پہلے تو انہوں نے اسے یہ نہیں بتایا کہ اس کا بیٹا زکریا شہید ہو گیا ہے جب اسے قابض فوجیوں نے گولی مار دی تو وہ زخمی ہوا ۔ اس نے مزید کہا کہ وہ فائرنگ کی آوازوں سے بیدار ہوئی اور جب اس نے اپنے بچوں کو چیک کیا تو اسے زکریا نہیں ملا۔

بدوان ان 5 فلسطینیوں میں سے ایک تھا جو گزشتہ رات مغربی کنارے اور یروشلم میں اسرائیلی قابض افواج کی گرفتاریوں کی مہم کے دوران مارے گئے تھے ۔

اتوار کی صبح قابض افواج نے جنین اور بیت المقدس میں 5 نوجوانوں کو شہید کر دیا جبکہ اسرائیلی فوجی کنٹرول نے انکشاف کیا کہ "دفتن” یونٹ کا ایک افسر اور ایک سپاہی ایک آپریشن کے دوران حماس کے فوجی سیل کے ساتھ جھڑپوں کے دوران شدید زخمی ہو گیا ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles