علماء و ذاکرین کانفرنس ، علاقائی پیشرفت کے تناظر میں ملک میں شیعہ مسائل پر تبادلہ خیال

پاکستان میں شیعہ جماعتوں نے جمعرات کو اپنا سالانہ اجلاس منعقد کیا تاکہ پاکستانی میدان میں شیعہ مسلمانوں کی حقیقت اور ملک کے موجودہ حالات کے دوران ان کو درپیش مسائل پر تبادلہ خیال کیا جا سکے ۔

کانفرنس ، جس کا عنوان ” علماء و ذاکرین کانفرنس برائے تحفظ حقوق مکتب شیعہ و تحفظ عزاداری” تھا ، میں مجلس وحدت المسلمین ، پاکستانی اسلامی تحریک اور پاکستان بھر سے مدارس کے اساتذہ نے شرکت کی ۔

کانفرنس نے ملک میں عزادی کو درپیش خطرات اور بعض غیر ملکی حمایت یافتہ کافر گروہوں کی طرف سے اہل بیت کے چاہنے والوں پر ظلم و ستم کو اجاگر کیا جو ملک میں عزاداری کو روکنے کے لیے حکومت پر دباؤ ڈالنے کا کام کرتے ہیں ۔

کانفرنس میں ان حکومتی اقدامات کے بارے میں بھی بات کی گئی جن میں کچھ علما کو نشانہ بنایا گیا اور منبر حسینی کے کچھ مبلغین کو مجلس پڑھنے سے روک دیا گیا تھا ۔

شرکاء نے پاکستانی حکام سے مطالبہ کیا کہ طالبان کی عبوری حکومت کے تحت افغانستان سے پاکستان میں دہشت گردی کے پھیلاؤ کو روکا جائے کیونکہ اس سے ملک میں فرقہ وارانہ بحران کی روشنی میں شیعوں کی سلامتی اور حفاظت لامحالہ متاثر ہوگی ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles