افغانستان میں انسانی صورت حال کو بہتر بنانا ضروری ہے ، ایرانی وزیر خارجہ

ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے پیر کو اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین فلپو گرانڈی سے ملاقات کی اور افغانستان میں انسانی صورت حال کو بہتر بنانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی تنظیموں کو اپنی ذمہ داریاں ادا کرنی چاہئیں ۔

عبداللہیان کا یہ موقف اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین فلپو گرانڈی سے نیویارک میں ملاقات کے دوران سامنے آیا ۔

ملاقات میں دونوں فریقوں نے اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین اور اسلامی جمہوریہ ایران کے درمیان مشاورت بڑھانے کی اہمیت پر زور دیا اور دونوں فریقوں کے درمیان تعلقات کے مختلف پہلوؤں پر تبادلہ خیال کیا ۔

ایرانی وزیر خارجہ نے افغانستان میں انسانی صورتحال کو بہتر بنانے کی ضرورت پر زور دیا ۔ انہوں نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے اب ہم افغانستان کے اندر افغان لوگوں کی نقل مکانی کے علاوہ پڑوسی ممالک میں ان کے ہجرت کا مشاہدہ کر رہے ہیں ۔

عبداللہیان نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران چار دہائیوں سے 40 لاکھ افغانیوں کی میزبانی کر رہا ہے اور ان تمام سالوں میں پابندی کی شرائط ، معاشی دباؤ اور بالآخر کورونا وباء کے پھیلنے کے باوجود ، اس نے ایک اچھا میزبان بننے کی کوشش کی ہے ۔ لیکن بین الاقوامی تنظیموں کے لیے ضروری ہے کہ وہ اپنی ذمہ داریوں کے ساتھ زیادہ مؤثر طریقے سے افغانستان میں انسانی صورت حال کے لیے کام کریں ۔

فلپو گرانڈی نےاس ملاقات میں افغان مہاجرین کے ساتھ اسلامی جمہوریہ ایران کی فراخدلانہ مہمان نوازی کی تعریف کرتے ہوئے افغانستان کی تازہ ترین صورتحال اور انسانی حقوق کے چیلنجوں کی وضاحت کی۔

انہوں نے اس ملک کے دورے کے بارے میں ایک رپورٹ پیش کرتے ہوئے یو این ایچ سی آر کے منصوبوں کی وضاحت کر کے افغان پناہ گزینوں سمیت مہاجرین کی صورتحال پر اس تنظیم کے عملی اقدامات اٹھانے پر زور دیا۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles