لاکھوں حسینی عزاداران کا سفر عشق سوئے کربلا جاری

عراق کے مختلف علاقوں سے لاکھوں زائرین ، اربعین امام حسین علیہ السلام کے سلسلے میں کربلا مقدسہ کی طرف پیدل رواں دواں ہیں ۔

یہ راستے بغداد – کربلا ، نجف – کربلا ، بابل – کربلا ، حسینیہ – کربلا اور الحر- کربلا ہیں جو لاکھوں عراقی ، عرب ، ایرانی اور غیر ملکی زائرین کی آمد کا مشاہدہ کر رہے ہیں ۔ ہر سال اربعین پر لاکھوں زائرین امام حسین علیہ السلام اور ان کے بھائی ابوالفضل العباس کے سنہری روضوں کے گرد دیوانہ وار جمع ہوتے ہیں ۔ عاشقان اہلبیت کے اس اجتماع کو تاریخ کے سب سے بڑے انسانی مظاہرے میں شمار کیا جاتا ہے ۔

عراق اور اسلامی دنیا میں روضہ امام حسین و حضرت عباس کے جنرل سیکریٹریٹس سے وابستہ اداروں نے اتوار کو اعلان کیا کہ تمام گورنریٹس کے 11356 سے زائد موکب کو رجسٹرڈ کیا گیا ہے جس میں 59 عرب اور غیر ملکی موکب بھی شامل ہیں ۔

شعبہ کے سربراہ ریاض نعمت آل سلمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 25 محرم کے بعد سے الشعائر و المواکب حسینہ محکمے نے موکب کے مالکان کے لیے ضمانتیں جاری کرنے کے لیے کام کیا ہے جو اربعین کے دورے میں شریک ہوں گے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس دورے میں شرکت کرنے والے غیر ملکی موکب چین ، سویڈن ، سعودی عرب ، شام ، ایران ، لبنان ، پاکستان ، بھارت ، نائیجیریا ، کینیا اور دیگر ممالک کے شہریوں سے وابستہ ہیں جو زائرین کی خدمت کے ذریعے امام حسین علیہ السلام کی عزاداری میں شریک ہوں گے ۔

انہوں نے وضاحت کی کہ تمام حسینی موکب سفید تیل اور گیس کے ایندھن سے لیس ہوں گے ۔ حسینی موکب کے مالکان زائرین کو لنگر حسینی فراہم کرنے کے علاوہ ، اعلی مراجع قیادت کی طرف سے تصدیق شدہ سفارشات پر عمل کرنے کے تاکید اور عراقی وزارت صحت کی ہدایات اور روک تھام کی شرائط کو نافذ کرنے کی ضرورت اجاگر کریں گے ۔

عراقی وزیر دفاع نے اربعین حسینی کے موقع پر کربلا کی سمت جانے والے زائرین کی سکیورٹی کو یقینی بنانے کے مقصد سے مزید احکامات جاری کئے ہیں ۔
وزیر دفاع جمعہ عناد سعدون نے کربلا آپریشن یونٹ کے کمانڈروں اور سکیورٹی اہلکاروں کے ساتھ ہوئے ایک اجلاس میں کربلا کے تمام صحرایی علاقوں، زمینی سرحدوں کو تمام تر دقت نظر کے ساتھ مانیٹر کرنے پر زور دیا ۔ انہوں نے کہا کہ زائرین کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے کربلا صوبے کی جانب آنے والے تمام راستوں کی سکیورٹی پر گہری نظر رکھی جائے اور سکیورٹی و انٹیلیجینس اقدامات مزید مستعدی کے ساتھ انجام دئے جائیں ۔

انہوں نے کربلا کے گورنر ہاؤس پہنچ کر گورنر نصیف جاسم الخطابی سے بھی ملاقات کی جس میں اربعین حسینی کے پیش نظر صوبہ کربلا کی سکیورٹی کی تازہ ترین صورتحال اور انجام شدہ اقدامات کا جائزہ لیا گیا ۔

یاد رہے کہ 20 صفر مطابق 27 ستمبر کو نواسہ رسول حضرت امام حسین علیہ السلام اور شہدائے کربلا کا چہلم یا یوم اربعین ہے جس کے پیش نظر لاکھوں عراقی و غیر ملکی زائرین کا کربلا کا سفر عشق شروع ہو چکا ہے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles