الکاظمی کی اختلافات پر قابو پانے اور سیاسی عمل پر اعتماد بحال کرنے کی تاکید

عراقی وزیر اعظم مصطفیٰ الکاظمی نے ملک کی حفاظت کے لیے پارہ پارہ یا ذاتی اختلافات اور فرقہ واریت پر قابو پانے پر زور دیا جبکہ نئے نمائندوں پر زور دیا کہ وہ سیاسی عمل میں اعتماد بحال کرنے کے لیے کام کریں ۔

وزیر اعظم کے میڈیا آفس نے بیان میں کہا کہ الکاظمی نے عید میلاد النبی کی تقریب میں شرکت کی اور اپنی تقریر میں کہا کہ ہم آج یہاں اپنے خاندان اور پیاروں کے درمیان کھڑے ہیں اور ان کے ساتھ عید میلاد النبی منانے کے لیے جمع ہیں ۔

بیان کے مطابق ، وزیر اعظم نے مزید کہا کہ بچپن سے میں نے نبی کریم کی سالگرہ اعظمیہ کی ابو حنیفہ النعمان مسجد میں دیکھی تاکہ ہمارے آقا محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی خوبیوں کو یاد کیا جا سکے ۔ میں تمام امت اسلامیہ کو پیغمبرِ انسانیت حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ والہ وسلم کی ولادت باسعادت کی مبارکباد پیش کرتا ہوں ۔ انہوں نے اپنے پیغام میں سبھی سے اپیل کی کہ وہ اس مناسبت کو ملکی و قومی اتحاد و بھائی چارے کی تقویت کا باعث قرار دیں تاکہ اس کے سائے میں عراقی عوام کی امنگوں کو محقق کیا جا سکے ۔

الکاظمی نے کہا کہ اخلاقیات کا ہمارے سچے مذہب میں اہم کردار ہے ۔ رسول اعظم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے کہاکہ مجھے اخلاق کا کامل نمونہ بنا کر بھیجا گیا ہے ۔ اخلاقیات اللہ کی عطاکردہ وہ نعمت ہے جس نے انسانوں کو دوسری مخلوقات سے ممتاز کیا ۔

یاد رہے کہ عراق میں حالیہ پارلمانی انتخابات کے اعلان شدہ نتائج کے خلاف بغداد ، بصرہ ، کرکوک اور بابل سمیت مختلف شہروں میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہو گیا ہے ۔ بعض سیاسی اتحادوں کا کہنا ہے کہ انتخابات میں بے ضابطیگیاں ہوئی ہیں اور جس کا ذمہ دار الیکشن کمیشن ہے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles