بیت المقدس میں فلسطینی نوجوانوں اور قابض فوج کے درمیان جھڑپیں

قابض پولیس کی طرف سے بیت المقدس کے باب العامود میں گولیوں اور صوتی بموں کی فائرنگ کے درمیان فلسطینی نوجوانوں اور قابض افواج کے درمیان جھڑپیں ہوئی ۔

گذشتہ رات باب العامود میں قابض افواج اور جوانوں کے درمیان جھڑپیں شروع ہوئیں جہاں پولیس نے گھڑسواروں کی ٹیموں کو بلا کر نوجوانوں کا پیچھا کیا اور انہیں منتشر دیا ۔

پولیس نے ان نوجوانوں کے ساتھ بدسلوکی کی ، ان میں سے کچھ کی تلاشی لی اور دوسروں کو مارنے کے بعد گرفتار کیا ۔ قابض پولیس نے کل شروع ہونے والی جھڑپوں کے دوران تین نوجوانوں کو گرفتار کیا جبکہ دیگر زخمی ہوئے ۔

وادی حلوہ انفارمیشن سینٹر نے بتایا کہ قابض فورسز نے وسیم برانی ، مصطفی سلیم ، اور مصعب العبید کو گرفتار کیا اور انہیں صلاح الدین اسٹریٹ پر قبضہ پولیس اسٹیشن میں تفتیش کے لیے لے گئے ۔

مقبوضہ بیت المقدس کے شمال مشرق میں نوجوانوں اور قابض افواج کے درمیان شوافت مہاجر کیمپ میں جھڑپیں ہوئیں ۔

مقامی ذرائع نے بتایا کہ نوجوانوں نے چیک پوائنٹ پر پتھر اور مولوتوف کاک پھینکے ۔

فورسز نے اسٹن گرینیڈ داغے اور ایک لڑکے پر حملہ کرنے کے بعد اسے گرفتار کر لیا ۔ غاصب فورسز نے ایک نوجوان کو اسلحہ دکھا کر دھمکی دی جب اس نے گرفتار لڑکے کے قریب جانے کی کوشش کی ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles