روس چین مشترکہ بحری مشقوں کا آغاز ، امریکہ کی نیندیں اڑ گئی

روس اور چین نے جمعہ کے روز ایک امریکی بحری جہاز کو نکالنے کے واقعے کے بعد بحیرہ جاپان میں اپنی منصوبہ بند مشترکہ بحری مشقوں کا آغاز کیا ۔

روسی وزارت دفاع نے ایک بیان میں کہا کہ امریکی بحری جہاز "چافی” جو کئی دنوں سے بحیرہ جاپان میں موجود ہے ، جمعہ کی شام پانچ بجے کے قریب روس کے علاقائی پانیوں کے قریب پہنچا اور سرحد پار کرنے کی کوشش کی جسے روسی بحریہ نے روک دیا ۔

دوسری طرف واشنگٹن نے ماسکو کے ان الزامات کی تردید کی کہ امریکی جنگی جہاز روسی علاقائی پانیوں کے بہت قریب آگئے تھے ۔ جبکہ ماسکو نے کہا کہ دو روسی بحری جہاز اور امریکی جنگی جہاز بحیرہ جاپان میں خطرناک حد تک ایک دوسرے کے قریب پہنچے تھے ۔

امریکی بحریہ نے ایک بیان میں تصدیق کی ہے کہ جو اطلاع دی گئی وہ "غلط” ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ یو ایس ایس چافی "بحیرہ جاپان کے بین الاقوامی پانیوں میں معمول کی کاروائیاں کر رہی ہے ۔ اس نے دونوں ممالک کے جہازوں کے درمیان تعامل کو "محفوظ اور پیشہ ورانہ” قرار دیا ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles