اماراتی حمایت یافتہ عبوری کونسل نے مظاہروں کو دبانے کے لئے 4 یمنیوں کو شہید کر دیا

جنوبی یمن میں امارت کے حامی فورسز کی جانب سے عوامی مظاہروں کو دبانے میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر چار اور زخمیوں کی تعداد تین ہو گئی ہے ۔

جنوبی عارضی کونسل نے ہنگامی حالت کا اعلان کرنے اور پورے عدن شہر میں فوجی کمک کی تعیناتی کے باوجود عدن اور حضرالموت گورنریٹ میں مسلسل چوتھے روز بھی عوامی احتجاج جاری ہے ۔

عدن کی صورت حال کی تازہ ترین پیشرفت میں ممادرا علاقے نے گزشتہ گھنٹوں کے دوران 22 مئی کے اسٹیڈیم کے ساتھ ساتھ عوامی مظاہروں کا مشاہدہ کیا ۔

یہ بات قابل غور ہے کہ خدمات کی خرابی کی مذمت کرتے ہوئے اور متحدہ عرب امارات کی حمایت یافتہ جنوبی عبوری کونسل کے خلاف مشتعل احتجاج کا علاقہ آج صبح طلوع فجر تک صوبہ لحج تک پھیل گیا ۔

سینکڑوں مظاہرین نے متحدہ عرب امارات سے وابستہ ملیشیا کے ساتھ کئی علاقوں میں جھڑپیں کیں ۔ سرکاری عمارتوں کو آگ لگا دی اور سڑکوں پر گاڑیاں جلا دیں ۔

واضح رہے کہ جنوبی عارضی فورسز کی قیادت میں متحدہ عرب امارات سے وابستہ فورسز کی طرف سے مظاہرین کو دبانے کی کوششوں کے درمیان عدن شہر ایک مقبول احتجاجی تحریک کا مشاہدہ کر رہا ہے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles