افغان کسانوں کو فوری مدد کی ضرورت ہے ، فوڈ اینڈ اگریکلچر آرگنائزیشن

15 اگست سے 7 ستمبر تک ورلڈ فوڈ پروگرام نے تقریبا 600،000 افراد کو خوراک اور غذائیت کی مدد فراہم کی جن میں 13،500 بچے سکول کھانے کے پروگرام کے تحت اور 105،000 مائیں اور چھوٹے بچے شامل تھے ۔

اسی عرصے کے دوران ایجنسی غذائیت کی روک تھام اور علاج کے لیے لپڈ پر مبنی غذائی سپلیمنٹس (ایل این ایس) سمیت 29 اضافی ٹرک ملک میں لائی ۔

ایف اے او کے ڈائریکٹر آف ایمرجنسی اینڈ لچک رین پولسن نے کہا کہ افغان کاشتکاروں کے لیے گندم کی کاشت شروع کرنے کا وقت ختم ہو رہا ہےجو کہ ملک کی غذائی تحفظ کے لیے اہم فصل ہے ۔ انہوں نے افغانستان کے زراعت کے شعبے کے لیے مدد کی اپیل کی ۔

منگل کو کابل سے ویڈیو لنک کے ذریعے نیو یارک میں نامہ نگاروں کو بریفنگ دیتے ہوئے پالسن نے کہا کہ تنظیم کے پاس کافی وسائل ہیں تاکہ وہ آئندہ سردیوں کے موسم کے لیے اضافی 1.4 ملین افغانوں کی مدد کر سکے لیکن مزید کی ضرورت ہے ۔ افغانستان میں کی توجہ زیادہ تر معاش کو بڑھانے اور مقامی خوراک کی پیداوار کی حمایت پر ہے ۔ انہوں نے کہا ہے کہ ہم اس خطے پر توجہ مرکوز کرنے کی وجہ یہ ہے کہ زراعت افغانستان کے لوگوں کو کھانا کھلانے ، انہیں زندہ رکھنے اور خوراک پر انحصار برقرار رکھنے کے لیے ناگزیر ہے ۔

ایف اے او کے مطابق زراعت افغانستان کی جی ڈی پی میں 25 فیصد سے زیادہ حصہ ڈالتی ہے اور افغانستان کے تقریبا 45 فیصد افرادی قوت کو براہ راست ملازمت دیتی ہے جبکہ تقریبا 80 فیصد افغان آبادی کو روزگار کے فوائد بھی فراہم کرتی ہے ۔

پالسن نے کہا کہ آدھے سے زیادہ کیلوری جو افغان روزانہ کھاتے ہیں وہ گندم سے حاصل ہوتی ہے جن میں سے زیادہ تر تیزی سے آنے والے موسم سرما کے دوران اگائی جاتی ہے ۔

پیر کے روز ایف اے او نے 36 ملین ڈالر کی اپیل کا آغاز کیا جس کا مقصد افغان کسانوں کی مدد کو تیز کرنا اور اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ وہ آئندہ موسم سرما میں گندم کی کاشت کے موسم سے محروم نہ رہیں اور اس سال کے آخر تک 3.5 ملین کمزور افغانوں کی زرعی معاش کی مدد کریں ۔

موجودہ سیاسی انتشار کے باوجود ایف اے او 31 صوبوں میں سے 28 میں اپنی کارروائیاں جاری رکھنے میں کامیاب رہا ہے جس میں وہ کام کر رہا ہے اور آنے والے ہفتوں میں زراعت اور مویشیوں سے وابستہ دس لاکھ سے زائد خاندانوں کو مدد فراہم کرنے کا ہدف رکھتا ہے ۔

ایجنسی پہلے ہی اس سال اب تک 1.9 ملین سے زائد لوگوں کو نقد اور معاش کی مدد فراہم کرچکی ہے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles