امریکی افغانستان میں جنگ ، تباہی اور خونریزی کے سوا کچھ نہیں لائے ، ایرانی صدر

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے کہا ہے کہ امریکیوں نے افغانستان میں 20 سال کی موجودگی کے دوران افغان عوام کے لیے جنگ ، تباہی ، خونریزی اور مصائب کے سوا کچھ نہیں کیا ۔

صدر رئیسی نے کل جمعہ کو اپنے بیان میں صوبہ جنوبی خراسان (مشرقی ایران) کی انتظامی کونسل کے اجلاس کے دوران کہا ہے کہ امریکیوں اور مغربی لوگوں نے کسی کے لیے ایک گرہ حل نہیں کی ہے اور وہ ہمارے لیے ایک گرہ بھی حل نہیں کریں گے ۔

ایرانی صدر نے چند روز قبل یورپی کونسل کے صدر کے ساتھ اپنی ٹیلی فون پر بات چیت کا حوالہ دیا اور کہا کہ اس بات میں افغانستان کا مسئلہ اٹھایا گیا جیسا کہ (یورپی کونسل کے صدر) نے کہا کہ یہ مسئلہ مغرب کے لیے ایک بڑا سبق ہے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی 20 سال افغانستان میں رہے لیکن اس عرصے کے دوران وہ افغان عوام کے لیے جنگ ، خونریزی اور مصائب کے سوا کچھ نہیں لائے ۔ انہوں نے افغان عوام پر 20 سال کی مصیبت مسلط کی اور 35،000 معذور بچوں کو چھوڑ دیا ۔ افغانستان میں ایسا کون سا گھر ہے جسے انہوں نے تباہ نہیں کیا اور اس گھر میں مقتول نہیں ہے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles