نائن الیون کی 20 ویں برسی پر بائیڈن کا خطاب

نائن الیون کی بیسویں برسی کے موقع پر امریکی صدر جو بائیڈن نے امریکیوں پر زور دیا کہ وہ اپنے اتحاد کو ہماری سب سے بڑی طاقت کے طور پر دکھائیں ۔

جمعہ کی آدھی رات کو وائٹ ہاؤس کے آفیشل پیجز پر ایک ویڈیو کلپ جاری کیا گیا جس میں بائیڈن نے کہا ہے کہ میرے لیے 9/11 کا اہم سبق یہ ہے کہ انتہائی سخت حالات میں ، دباؤ اور تناؤ کے درمیان اور امریکی زندگیوں کے لیے جنگ میں اتحاد ہماری سب سے بڑی طاقت ہے ۔

انہوں نے کہا کہ اتحاد کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہمیں اس پر یقین کرنا چاہیے بلکہ یہ کہ ہمیں ایک دوسرے اور اس قوم کے لیے بنیادی احترام اور یقین ہونا چاہیے ۔

ویڈیو میں بائیڈن نے ، ان حملوں میں ہلاک ہونے والوں اور ہزاروں زخمیوں ، نیز فائر فائٹرز ، نرسنگ عملہ اور دیگر جنہوں نے ریسکیو اور حملے کے بعد ریسکیو مشن کے دوران اپنی جانیں گنوائیں یا اپنی جانیں گنوائیں ، کو خراج عقیدت پیش کیا ۔

آج ، ہفتہ ، بائیڈن اور خاتون اول جل بائیڈن نے 9/11 حملوں کی جگہ کا نیویارک ، پینٹاگون اور پنسلوانیا میں دورہ کیا ۔

یاد رہے کہ 11 ستمبر 2001 کی صبح خودکش حملہ آوروں نے مشرقی امریکہ سے بیک وقت اڑنے والے چار طیارے ہائی جیک کیے ۔ انہوں نے طیاروں کو دیوہیکل گائیڈڈ میزائل کے طور پر استعمال کیا ۔ دو طیارے نیویارک کے ورلڈ ٹریڈ سینٹر سے ٹکرا گئے جبکہ تیسرے طیارے نے واشنگٹن کے باہر پینٹاگون کے مغربی حصے کو تباہ کر دیا جبکہ چوتھا طیارہ پنسلوانیا کے ایک چوک میں گر کر تباہ ہو گیا ۔ ان تمام حملوں میں 2،977 افراد ہلاک ہوئے ۔

واضح رہے کہ امریکہ پر بظاہر القائدہ کے دہشتگردانہ حملے کی 20 برسی ایسی حالت میں منائی جا رہی ہے کہ امریکہ القائدہ اور طالبان کو شکست دینے کے بہانے افغانستان پر جنگ تھوپنے اور اس ملک پر 20 سال تک قبضہ کرنے کے بعد ذلت کے ساتھ فرار ہو گیا ۔ امریکہ کے نکلنے اور طالبان کے افغانستان پر تسلط جمانے کی وجہ سے پوری دنیا میں بائیڈن حکومت کو خفت کا سامنا ہے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles