افغانستان میں نسلی و فرقہ وارانہ فسادات کو ہوا دینا ، دشمن کی نئی چال ہے ، ایرانی اسپیکر

ایرانی اسلامی مشاورتی اسمبلی کے اسپیکر محمد باقر قالیباف نے اتوار کو افغانستان میں مسجد قندوز پر ہونے والے دہشت گردانہ حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ نسلی اور فرقہ وارانہ فسادات کو ہوا دینا افغانستان کے دشمنوں کی نئی اسکیم ہے ۔

آج اسلامی مشاورتی اسمبلی کے عوامی اجلاس کے آغاز میں قالیباف نے کہا کہ افغان صوبے قندوز میں سید آباد مسجد کو نشانہ بنانے والے دہشت گرد خودکش بم دھماکے کے نتیجے میں بڑی تعداد میں بے گناہ افغانوں کی شہادت آزادیوں کے دلوں کو ٹھیس پہنچاتی ہے ۔

قالیباف نے اس المناک حادثے پر افغان شہریوں سے گہری تعزیت پیش کی اور اللہ تعالیٰ سے دعا کی کہ وہ متاثرین کے لواحقین کو صبر اور سکون عطا کرے ۔

قالیباف نے تکفیری دہشت گردوں کے اس وحشیانہ جرم کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ افغان حکام ملک میں سلامتی کو یقینی بنانے کی ذمہ داری اٹھائیں ، اس افسوسناک واقعے میں ملوث افراد کو سزا دینے اور اس طرح کے سانحات کو دوبارہ ہونے سے روکنے کے لیے ضروری اقدامات کریں ۔

انہوں نے مزید کہا ہے کہ نسلی اور فرقہ وارانہ جھگڑا افغان عوام کے دشمنوں کے لیے ایک نئی سکیورٹی اسکیم ہے جسے دہشت گرد گروہوں نے امریکیوں کے تعاون سے نافذ کیا ہے ۔

انہوں نے اسلامی ممالک کے رہنماؤں پر زور دیا کہ وہ تکفیری گروہوں کی سرگرمیوں کے تسلسل کو روکنے اور پورے خطے میں سکیورٹی کو یقینی بنانے کے لیے اسلامی قوم کے اتحاد قائم کرنے کے لئے ضروری اقدامات کریں ۔

یاد رہے کہ داعش کے ایک خودکش بمبار نے سید آباد کی ایک مسجد میں نماز جمعہ کے دوران اپنی دھماکہ خیز بنیان کو دھماکے سے اڑا دیا ، جس میں کم از کم 60 افراد شہید ہوئے ، جنہیں گذشتہ روز دفن کیا گیا ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles