طالبان کی نگران حکومت سازی کا خیرمقدم کرتے ہیں ، چینی وزارت خارجہ

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان وانگ وینبن نے کہا کہ چین طالبان کی جانب سے افغانستان میں نگران حکومت کے قیام اور کام کرنے والے افراد کے لیے کچھ اہم انتظامات کو اہمیت دیتا ہے ۔

ترجمان وانگ نے بدھ کو ایک پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ اس اعلان نے افغانستان میں تین ہفتوں سے زیادہ افراتفری کا خاتمہ کیا اور افغانستان میں امن کی بحالی اور جنگ کے بعد کی تعمیر نو کی طرف ایک ضروری قدم ہے ۔

انہوں نے کہا ہے کہ افغان مسئلے پر چین کا موقف مستقل اور واضح ہے ۔ چین عدم مداخلت کی پالیسی پر عمل پیرا ہے ، افغانستان کی آزادی ، خودمختاری اور علاقائی سالمیت کا احترام کرتا ہے اور افغان عوام کو ان کے قومی حالات کے مطابق ترقی کے راستے کا انتخاب کرنے میں مدد کرتا ہے ۔

انہوں نے چین کی اس امید کا اظہار کیا کہ افغانستان ایک وسیع اور جامع سیاسی فریم ورک بنائے گا ، اعتدال پسند اور دانشمندانہ ملکی اور خارجہ پالیسیاں اپنائے گا ، ہر قسم کی دہشت گردی کا عزم سے مقابلہ کرے گا اور تمام ممالک بالخصوص پڑوسی ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم کرے گا ۔

وانگ نے نئی افغان حکومت اور اس کے رہنماؤں کے ساتھ رابطے کو برقرار رکھنے کے لیے چین کی آمادگی کا بھی اظہار کیا اور اس امید کا اظہار کیا کہ نئی حکومت نسلی گروہوں اور جماعتوں کے خیالات کو وسیع پیمانے پر ایڈجسٹ کر سکتی ہے اور افغان عوام کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی برادری کی خواہشات کو پورا کر سکتی ہے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles