قاہرہ اور انقرہ کے درمیان مذاکرات کا دوسرا دور ختم

ترک وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ قاہرہ اور انقرہ کے مابین دوسرے دور کی تحقیقاتی مشاورت نے دونوں ملکوں کے درمیان زیر بحث مسائل پر پیشرفت اور تعلقات کو معمول پر لانے کی خواہش کی تصدیق کی ۔

یہ ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب مصری وزیر خارجہ سمیع شکری نے کہا کہ قاہرہ انقرہ کے ساتھ معمول کے تعلقات کی بحالی کے لیے فارمولا تلاش کرنے کا خواہاں ہے ۔

ترکی کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مذاکرات کا دوسرا دور منگل اور بدھ کو انقرہ میں ہوا جس کی سربراہی ترکی کے نائب وزیر خارجہ سیدات انال اور ان کے مصری ہم منصب حمدی لوزا نے کی ۔

انہوں نے وضاحت کی کہ ملاقاتوں میں دو طرفہ مسائل اور کئی علاقائی مسائل پر غور کیا گیا جن میں سب سے سرفہرست لیبیا ، شام ، فلسطین اور مشرقی بحیرہ روم میں پیشرفت شامل ہے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ دونوں فریقوں نے دونوں ممالک کے مابین تبادلہ خیال اور تعلقات کو معمول پر لانے کے لیے مزید اقدامات کرنے کی خواہش کی تصدیق کی اور مشاورت جاری رکھنے پر اتفاق کیا ۔

بدھ کے روز مصری وزارت خارجہ نے کہا کہ دوسرے دور نے ایک مشترکہ بیان جاری کیا ، جس میں کہا گیا کہ دونوں وفود نے دو طرفہ مسائل اور کئی علاقائی مسائل ، جیسے لیبیا ، شام ، عراق ، فلسطین اور مشرقی بحیرہ روم کی صورت حال سے نمٹا ۔

مشترکہ بیان کے مطابق ، دونوں جماعتوں نے ان مشاورت کو جاری رکھنے پر اتفاق کیا اور زیر بحث مسائل پر پیش رفت کی خواہش کی تصدیق کی اور دونوں فریقوں کے درمیان تعلقات کو معمول پر لانے کے لیے اضافی اقدامات کرنے کی ضرورت پر زور دیا ۔

مصری وزیر خارجہ نے ایک انٹرویو میں کہا کہ ان کا ملک ترکی کے ساتھ معمول کے تعلقات کو بحال کرنے کا فارمولا تلاش کرنے کا خواہاں ہے ۔

شوکری نے کہا ہے کہ یہ مصر اور ترکی کے درمیان تحقیقاتی مذاکرات کا دوسرا مرحلہ ہے اور یہ ترک حکومت کی دعوت پر آیا ہے ۔ ہم کسی فیصلے تک پہنچنے کے خواہاں ہیں اور دونوں ممالک کے درمیان معمول کے تعلقات کو بحال کرنے کے لیے ایک ضروری فارمولا تلاش کریں گے ۔ لیکن اس مرحلے پر ہمیں اب بھی مذاکرات کے دوسرے مرحلے کے نتائج کا جائزہ لینے کی ضرورت ہے ۔

شوکری نے مزید کہا کہ دو طرفہ تعلقات اور ترکی کی طرف سے اٹھائے گئے کچھ عہدوں کو کسی طرح سے حل کرنے کی ضرورت ہے اور جب ہم مطمئن ہوجائیں کہ یہ مسائل حل ہوچکے ہیں تو اس سے مزید ترقی کے دروازے کھلیں گے ۔

5-6 مئی کو دونوں ملکوں کے درمیان مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں مصری فریق کی دعوت پر پہلے دور کی بات چیت ہوئی ۔

پچھلے مہینوں کے دوران قاہرہ اور انقرہ کے تعلقات کے بارے میں مثبت اشارے سامنے آئے خاص طور پر ترک وزیر خارجہ میولت کیووسوگلو کے بیانات کے بارے میں کہ دونوں ممالک مشرقی بحیرہ روم میں اپنی سمندری سرحدوں کی حد بندی پر بات چیت کریں گے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles