چانسلر تحقیقات مکمل ہونے تک اپنے عہدے پر برقرار رہیں ، آسٹریائی صدر

آسٹریا کے صدر الیگزینڈر وان ڈیر بیلن نے چانسلر سیبسٹین کرز سے کہا ہے کہ وہ اپنے کام میں اس وقت تک رہیں جب تک کہ ان کے خلاف مبینہ بدعنوانی کے مقدمات کی تحقیقات مکمل نہیں ہو جاتی ۔

کرز نے کہا کہ وہ صدر کی طرف سے تفویض کردہ اپنے فرائض کو جاری رکھیں گے ۔ گیند اب حکومتی اتحاد (گرین پارٹی) میں ان کے ساتھی کے کورٹ میں ہے ۔ اگر وہ اتحاد ختم کرنا چاہتا ہے تو اسے دوسری جماعتوں کے ساتھ مل کر پارلیمنٹ میں اکثریت کی تلاش کرنی ہو گی ۔

کرز نے واضح کیا کہ وہ بدعنوانی ، رشوت خوری اور غداری کے تمام الزامات سے بے قصور ہیں جو کہ میڈیا نے حریف جماعتوں کے اکسانے پر اس کو زیادہ شہ دی ہے ۔ اس بات کی نشاندہی کرتے ہوئے کہ ملزم کے اصول کو لاگو کرنے کی ضرورت ہے جب تک کہ جرم ثابت نہ ہو ۔

دوسری طرف درجنوں لوگوں نے پارٹی ہیڈ کوارٹر کے سامنے مظاہرہ کیا ، جو حکومتی اتحاد کی قیادت کرتا ہے ، کرز کے بدعنوانی کے مقدمات میں ملوث ہونے کی تحقیقات پر کرز کے استعفیٰ کا مطالبہ کرنے کے لیے ۔

یاد رہے کہ ویانا (رائٹرز) کرپشن پراسیکیوٹرز نے ان کے خلاف تحقیقات شروع کر دیں ہیں ۔اس سلسلے میں گزشتہ روز پراسیکیوٹرز نے چانسلر آفس سمیت متعدد سرکاری دفاتر پر چھاپے مارے ۔ پراسیکیوٹرز کے مطابق چانسلر سباستیان کرس ،9 دیگر افراد اور تین اداروں کے خلاف تحقیقات کی جا رہی ہیں ۔ ان پر الزام ہے کہ 2016 سے 2018 کے دوران انہوں نے رائے عامہ کو اپنے حق میں موڑنے کیلئے سرکاری فنڈز استعمال کئے ۔ ادھر چانسلر سباستیان کرز نے سرکاری فنڈز کے ناجائز استعمال کی تردید کرتے ہوئے واضح کیا کہ وہ مستعفی نہیں ہوں گے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles