فلسطینی قیدی ، غاصب جیلوں کے متنازعہ قوانین کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے

اسرائیلی قابض جیلوں میں قید ، فلسطینی قیدیوں نے اپنے خلاف جابرانہ اقدامات کو مسترد کرتے ہوئے جیل قوانین کے خلاف بغاوت کا اعلان کیا ۔

پریزنرز انفارمیشن آفس نے اعلان کیا کہ نگو جیل میں سیکشن 6 کے قیدیوں نے کمروں کو آگ لگا دی جس کے تحت ان پر جبر کی شدید مہم چلائی جا رہی ہے ۔ جیل اتھارٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ کل جیلوں میں تقسیم کریں گے ۔

کمیشن برائے اسرا اور سابق قیدیوں کے امور نے اطلاع دی ہے کہ خصوصی یونٹس ، جو ہر قسم کے ہتھیاروں اور پولیس کے کتوں سے لیس ہیں ، نگو جیل میں سیکشن 6 پر دھاوا بول دیا جن کو قریبی فوجی اڈے سے بلائے گئے قابض فوجیوں کی بڑی تعداد کی مدد حاصل تھی ۔ انہوں نے قیدیوں کے ہاتھ پاؤں میں ہتھکڑیاں لگائیں اور ان پر تشدد کیا ۔ قیدیوں نے 7 کمروں کو جلا دیا ۔

جہاد اسلامی کے قیدیوں کو منتقل کرنے کی کوشش کے بعد قیدیوں نے میگڈو جیل میں بھی کمروں کو آگ لگا دی ۔ مہجت القدس فاؤنڈیشن نے رپورٹ کیا کہ صہیونی طاقتوں نے ریمنڈ جیل میں دھاوا بول دیا اور جہاد اسلامی کے قیدیوں کو دوسرے دھڑوں کے باقی حصوں میں تقسیم کرنا شروع کر دیا جبکہ دشمن میڈیا نے کہا کہ جہاد اسلامی کے قیدیوں نے انہیں نگو جیل سے منتقل کرنے اور منتشر کرنے سے سختی سے انکار کیا اور اسے آگ لگانے کی کوشش کی ۔

پریزنرز کلب نے اطلاع دی ہے کہ فلسطینی قیدیوں کے خلاف تعزیراتی اقدامات کے پس منظر میں کئی اسرائیلی جیلوں میں کشیدگی کی کیفیت ہے اور قابض حکام نے نیگیو جیل میں فلسطینی قیدیوں کو دبانے کے لیے فوج طلب کی ہے ۔

اسیر تحریک کی قیادت نے جیل انتظامیہ کو ایک فوری ٹیلی گرام میں آگاہ کیا کہ جاد قیدیوں کی منتقلی کے لیے کسی بھی حصے کو آگ لگا دی جائے گی جبکہ "وید” ایسوسی ایشن برائے قیدیوں نے اعلان کیا کہ تمام جیلوں میں قیدیوں کا فیصلہ قیدیوں کی منتقلی اور علیحدگی سے متعلق کسی بھی فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنا اور ہر قیمت پر اس کا مقابلہ کریں گے ۔

عبرانی کان چینل نے کہا کہ جیل اتھارٹی ، نگو جیل میں قیدیوں کو دبانے کے لیے اسرائیلی فوج کو استعمال کر رہی ہے اور جگہ جگہ محاذ آرائی شروع ہو گئی ہے ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles