روسی دفاع: فضائیہ نے کل رات یوکرین میں 29 فوجی تنصیبات کو تباہ کر دیا۔

روسی مسلح افواج کے ترجمان میجر جنرل ایگور کوناشینکوف نے آج جمعرات کو اعلان کیا کہ روسی فضائیہ نے گزشتہ رات یوکرین میں 29 فوجی تنصیبات کو تباہ کر دیا۔
"روسی فضائیہ نے یوکرین میں 29 فوجی تنصیبات کو نشانہ بنایا، جن میں دو کمانڈ پوسٹیں، اہداف کو روشن کرنے کے لیے ایک ریڈار اور کوراخوو کے علاقے میں S-300 طیارہ شکن میزائل نظام کی رہنمائی، سات آرٹلری بیٹریاں، میزائل کا ایک ڈپو، توپ خانہ اور گولہ بارود کے ہتھیار، 10 گڑھوں اور یوکرین کے فوجی سازوسامان کے گڑھوں کے علاوہ۔
انہوں نے مزید کہا: "روسی فضائی دفاعی نظام نے نوووسیلووکا وتورایا، چیروونائے، نووگرادوکا، الوواسک اور خرتزِک کے علاقوں میں پانچ ڈرونز کو فضا میں مار گرایا۔”
روسی وزارت دفاع کے ترجمان نے انکشاف کیا کہ مسلح افواج نے ڈون باس کے رہائشیوں کے تحفظ کے لیے خصوصی آپریشن کے آغاز سے لے کر اب تک 400 سے زیادہ ڈرونز اور 1,900 یوکرائنی ٹینک اور دیگر بکتر بند گاڑیوں کو تباہ کیا ہے۔
انہوں نے جاری رکھا، "خصوصی فوجی آپریشن کے آغاز سے اب تک مجموعی طور پر 125 جنگی طیارے، 93 ہیلی کاپٹر، 413 ڈرون، 227 طیارہ شکن میزائل سسٹم، 1987 ٹینک اور دیگر بکتر بند گاڑیاں، 218 راکٹ لانچر، 866 فیلڈ آرٹلری اور مارٹر، اس کے علاوہ خصوصی فوجی گاڑیوں کے 1,894 یونٹ تباہ کیے گئے ہیں۔”
روسی فوج نے مسلسل 43ویں دن یوکرین کے فوجی مقامات اور اجتماعات پر حملے جاری رکھے ہوئے ہیں، متاثرہ علاقوں کے مکینوں کو انسانی امداد فراہم کی ہے اور آزاد کرائے گئے علاقوں میں کنگھی کی جا رہی ہے۔
24 فروری کو، روسی صدر ولادیمیر پوتن نے یوکرین میں ایک خصوصی فوجی آپریشن شروع کرنے کا اعلان کیا، جس کا مقصد "ان لوگوں کی حفاظت کرنا ہے جنہیں کیف حکومت نے آٹھ سالوں سے ظلم و ستم اور نسل کشی کا نشانہ بنایا ہے۔”

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles