تمام پروازوں کی منسوخی اور بینکنگ، انٹرنیٹ اور مواصلاتی خدمات کی معطلی۔

پریس ذرائع نے آج صبح، جمعرات کو اطلاع دی کہ قازقستان کے دارالحکومت کے ہوائی اڈے پر تمام پروازیں ماسکو کے وقت کے مطابق رات 9 بجے تک منسوخ کر دی گئیں، انٹرنیٹ سروس کی عارضی معطلی اور بینکوں اور اسٹاک ایکسچینج کے کام کے درمیان۔ذرائع نے بتایا، "نور سلطان ہوائی اڈے پر، تمام پروازیں دوپہر 12 بجے (ماسکو وقت کے مطابق 9.00 بجے) تک منسوخ کر دی گئی ہیں۔ یہ الما-اتا، سیمی، پیٹروپولوفسک، اکتوبے، ترکستان اور ماسکو کے لیے پروازیں ہیں۔”دوسری جانب نیشنل بینک کی جانب سے جاری کردہ ایک رپورٹ کے مطابق، میڈیا نے بتایا کہ قازقستان میں بینکوں اور اسٹاک ایکسچینج کا کام ملک میں مظاہروں کے دوران عارضی طور پر معطل کر دیا گیا ہے۔ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ ملک کے بڑے شہروں میں اس وقت سیلولر مواصلات اور انٹرنیٹ معطل ہے۔قازقستان نے گیس کی قیمتوں میں دو گنا اضافے کے خلاف مظاہروں کے پس منظر میں ملک بھر میں ہنگامی حالت نافذ کر دی۔قازقستان میں نئے سال کے ابتدائی دنوں میں بڑے پیمانے پر مظاہرے شروع ہو گئے، کیونکہ مغربی قازقستان میں تیل پیدا کرنے والے علاقے منگیستاؤ کے قصبوں جانوسین اور اکتاو کے رہائشیوں نے گیس کی قیمتوں میں دو گنا اضافے کے خلاف احتجاج کیا۔قازقستان کے صدر قاسم زومارت توکایف نے مظاہرین کے مطالبات کو پورا کرنے اور گیس کی قیمتوں میں کمی کے لیے حکومتی کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کی۔یہ مظاہرے دوسرے شہروں میں بھی پھیل گئے۔ملک کے سب سے بڑے شہر اور پہلے دارالحکومت الما اتا میں مظاہرین کی سیکورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپیں ہوئیں اور پولیس نے گیس اور صوتی بموں کا استعمال کیا۔

توکایف نے شہریوں پر زور دیا کہ وہ سمجھدار بنیں اور اندر اور باہر سے اشتعال انگیزی میں نہ آئیں۔توکائیف نے 19 جنوری تک منگسٹاؤ اور الما-اتا کے علاقوں میں ہنگامی حالت نافذ کر دی، اور حکومت کو برخاست کر دیا اور کہا کہ کابینہ خاص طور پر ذمہ دار ہے کیونکہ اس نے ایسی صورتحال پیدا کی جس نے احتجاج کو جنم دیا۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles