بزرگ عالم دین شیخ عبدالامیر قبلان کا انتقال پرملال

لبنان میں سپریم اسلامی شیعہ کونسل نے اعلان کیا ہے کہ کونسل کے سربراہ شیخ عبدالامیر قبلان اپنے خالق حقیقی سے جا ملے ہیں ۔ مرجع تقلید شیخ عبدالامیر قبلان کافی عرصے سے بیمار تھے اور گذشتہ رات 85 سال کی عمر میں انتقال کر گئے ۔

سپریم شیعہ کونسل کی جانب سے موت کے باضابطہ اعلان سے قبل شیخ قبلان کے خاندان کے متعدد افراد نے ان کی موت کی خبر سوشل میڈیا پر شائع کی ۔

شیخ قبلان کی طبیعت پچھلے عرصے میں بگڑ گئی جس کی وجہ سے انہیں بار بار ہسپتال میں داخل کرنا پڑا ۔

شیخ عبدالامیر قبلان 1936 میں جنوبی لبنان میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد محمد علی قبلان اور دادا موسی قبلان خطے کے مشہور و معروف علماء میں سےتھے ۔

اس کے والد اسے عراق میں نجف لے گئے جہاں انہوں نے گرائمر ، مورفولوجی ، منطق اور عقائد سے تعارف کا مطالعہ جاری رکھا ۔

1963 میں مرجع سید محسن الحکیم کے حکم پر شیخ عبدالامیر قبلان واپس لبنان لوٹے تو وہ برج البرجنیہ قصبے میں گئے اور درس و تدریس میں اپنے فرائض کا آغاز کیا ۔

انہیں 1974 میں انہیں شیعہ مفتی کا منصب تفویض کیا گیا جب وہ امام سید موسیٰ الصدر کے مارچ میں ساتھی تھے ۔

1994 میں شیخ محمد مہدی شمس الدین سپریم اسلامی شیعہ کونسل کے صدر منتخب ہوئے اور شیخ قبلان کو متفقہ طور پر نائب صدر منتخب کیا گیا ۔

2017 میں سپریم اسلامی شیعہ کونسل نے اپنے قانونی اور انتظامی اداروں کے ساتھ ایک غیر معمولی اجلاس منعقد کیا جس میں شیخ عبدالامیر قبلان کی دعوت پر شریعت اور ایگزیکٹو باڈیز میں خالی آسامیوں کو پُر کرنے کے لیے قانون نمبر 1 کے اجراء کے بعد ووٹروں نے متفقہ طور پر شیخ قبلان کو شیعہ کونسل کا سربراہ مقرر کیا گیا ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles