بحرینی مظاہرین نے اسرائیلی پرچم نذر آتش کر دیا

ملک کے مختلف حصوں میں سینکڑوں بحرین باشعور عوامی مظاہرے میں نکلے ، بینر اٹھائے جن میں نارمل ہونے کی مذمت کی گئی اور منامہ میں صہیونی سفارت خانے کے افتتاح اور قابض ادارے کے وزیر خارجہ یائر لاپیڈ کے دورہ بحرین کی مذمت کرتے ہوئے نعرے لگائے گئے ۔ اپنے مارچ کے دوران مظاہرین نے اسرائیلی قبضے کا جھنڈا جلایا جبکہ دوسروں نے اسے اپنے پیروں تلے روند دیا ۔

بحرین کے عوام نے ملک کے مختلف علاقوں میں ہونے والے احتجاجی مظاہروں میں ہیہات مناالذلہ ، بحرین سے نکل جاو ، اسرائیل مردہ باد ، بحرین میں صیہونی سفارت خانہ نہیں کھلنے دیں گے جیسے نعرے لگائے اور اسرائیل کے پرچم کو نذر آتش کرتے ہوئے صیہونی حکومت کے ساتھ تعلقات معمول پر لانے کی پر زور مخالف کی ۔

جمعرات کو اسرائیلی وزیر خارجہ یائر لاپیڈ نے بحرین کے دارالحکومت منامہ میں قابض ادارے کے سفارت خانے کا باضابطہ افتتاح کیا جو کہ بحرین کے وزیر خارجہ عبداللطیف الزیانی کی موجودگی میں ہوئی ۔

یاد رہے کہ بحرین اور متحدہ عرب امارات نے ستمبر 2020 میں امریکہ کی ٹرمپ حکومت کے دباؤ میں آکر صیہونی حکومت کے ساتھ تعلقات بحال کرنے کے سمجھوتے پر دستخط کئے اور غاصب حکومت کے ساتھ سفارتی تعلقات کا اعلان کیا تھا ۔

مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
مواضيع ذات صلة
Related articles